+92-308-6112254

Tarjuma Kanzul Iman

12 - Yusuf
قَالَ مَعَاذَ اللہِ اَنْ نَّاْخُذَ اِلَّا مَنْ وَّجَدْنَا مَتَاعَنَا عِنْدَہٗٓ۰ۙ۝ اِنَّآ اِذًا لَّظٰلِمُوْنَ﴿79﴾
کہا خدا کی پناہ کہ ہم لیں مگر اسی کو جس کے پاس ہمارا مال ملا جب تو ہم ظالم ہوں گے
فَلَمَّا اسْتَيْـــَٔـسُوْا مِنْہُ خَلَصُوْا نَجِيًّا۰ۭ۝ قَالَ كَبِيْرُہُمْ اَلَمْ تَعْلَمُوْٓا اَنَّ اَبَاكُمْ قَدْ اَخَذَ عَلَيْكُمْ مَّوْثِقًا مِّنَ اللہِ وَمِنْ قَبْلُ مَا فَرَّطْتُّمْ فِيْ يُوْسُفَ۰ۚ۝ فَلَنْ اَبْرَحَ الْاَرْضَ حَتّٰى يَاْذَنَ لِيْٓ اَبِيْٓ اَوْ يَحْكُمَ اللہُ لِيْ۰ۚ۝ وَہُوَخَيْرُ الْحٰكِمِيْنَ﴿80﴾
پھر جب اس سے ناامید ہوئے الگ جاکر سرگوشی کرنے لگے اُن کا بڑا بھائی بولا کیا تمہیں خبر نہیں کہ تمہارے باپ نے تم سے اللّٰہ کا عہد لے لیا تھا اور اس سے پہلے یوسف کے حق میں تم نے کیسی تقصیر کی تو میں یہاں سے نہ ٹلوں گا یہاں تک کہ میرے باپ اجازت دیں یا اللّٰہ مجھے حکم فرمائے اور اس کا حکم سب سے بہتر
اِرْجِعُوْٓا اِلٰٓى اَبِيْكُمْ فَقُوْلُوْا يٰٓاَبَانَآ اِنَّ ابْنَكَ سَرَقَ۰ۚ۝ وَمَا شَہِدْنَآ اِلَّا بِمَا عَلِمْنَا وَمَا كُنَّا لِلْغَيْبِ حٰفِظِيْنَ﴿81﴾
اپنے باپ کے پاس لوٹ کر جاؤ پھر عرض کرو کہ اے ہمارے باپ بیشک آپ کے بیٹے نے چوری کی اور ہم تو اتنی ہی بات کے گواہ ہوئے تھے جتنی ہمارے علم میں تھی اور ہم غیب کے نگہبان نہ تھے
وَسْـــَٔـلِ الْقَرْيَۃَ الَّتِيْ كُنَّا فِيْہَا وَالْعِيْرَ الَّتِيْٓ اَقْبَلْنَا فِيْہَا۰ۭ۝ وَاِنَّا لَصٰدِقُوْنَ﴿82﴾
اور اس بستی سے پوچھ دیکھئیے جس میں ہم تھے اور اس قافلہ سے جس میں ہم آئے اور ہم بیشک سچّے ہیں
قَالَ بَلْ سَوَّلَتْ لَكُمْ اَنْفُسُكُمْ اَمْرًا۰ۭ۝ فَصَبْرٌ جَمِيْلٌ۰ۭ۝ عَسَى اللہُ اَنْ يَّاْتِيَنِيْ بِہِمْ جَمِيْعًا۰ۭ۝ اِنَّہٗ ہُوَالْعَلِيْمُ الْحَكِيْمُ﴿83﴾
کہا تمہارے نفس نے تمہیں کچھ حیلہ بنادیا تو اچھا صبر ہے قریب ہے کہ اللّٰہ ان سب کو مجھ سے لا ملائے بیشک و ہی علم و حکمت والا ہے
وَتَوَلّٰى عَنْہُمْ وَقَالَ يٰٓاَسَفٰى عَلٰي يُوْسُفَ وَابْيَضَّتْ عَيْنٰہُ مِنَ الْحُزْنِ فَہُوَكَظِيْمٌ﴿84﴾
اور ان سے منھ پھیرا اور کہا ہائے افسوس یوسف کی جدائی پر اور اس کی آنکھیں غم سے سفید ہوگئیں تو وہ غصہ کھاتا رہا
قَالُوْا تَاللہِ تَفْتَؤُا تَذْكُرُ يُوْسُفَ حَتّٰى تَكُوْنَ حَرَضًا اَوْ تَكُوْنَ مِنَ الْہٰلِكِيْنَ﴿85﴾
بولے خدا کی قسم آپ ہمیشہ یوسف کی یاد کرتے رہیں گے یہاں تک کہ گور کنارے جالگیں یا جان سے گزر جائیں
قَالَ اِنَّمَآ اَشْكُوْا بَثِّيْ وَحُزْنِيْٓ اِلَى اللہِ وَاَعْلَمُ مِنَ اللہِ مَا لَا تَعْلَمُوْنَ﴿86﴾
کہا میں تو اپنی پریشانی اور غم کی فریاد اللّٰہ ہی سے کرتا ہوں اور مجھے اللّٰہ کی وہ شانیں معلوم ہیں جو تم نہیں جانتے
Join Our Online Tajveed Course Classes
Flag Counter
Top