+92-308-6112254

Tarjuma Kanzul Iman

12 - Yusuf
وَرَاوَدَتْہُ الَّتِيْ ہُوَفِيْ بَيْتِہَا عَنْ نَّفْسِہٖ وَغَلَّقَتِ الْاَبْوَابَ وَقَالَتْ ہَيْتَ لَكَ۰ۭ۝ قَالَ مَعَاذَ اللہِ اِنَّہٗ رَبِّيْٓ اَحْسَنَ مَثْوَايَ۰ۭ۝ اِنَّہٗ لَا يُفْلِحُ الظّٰلِمُوْنَ﴿23﴾
اور وہ جس عورت کے گھر میں تھا اس نے اسے لبھایا کہ اپنا آ پا نہ روکے اور دروازے سب بند کردئیے اور بولی آؤ تمہیں سے کہتی ہوں کہا اللّٰہ کی پناہ وہ عزیز تو میرا رب یعنی پرورش کرنے والا ہے اس نے مجھے اچھی طرح رکھا بیشک ظالموں کا بَھلا نہیں ہوتا
وَلَقَدْ ہَمَّتْ بِہٖ۰ۚ۝ وَہَمَّ بِہَا لَوْلَآ اَنْ رَّاٰ بُرْہَانَ رَبِّہٖ۰ۭ۝ كَذٰلِكَ لِنَصْرِفَ عَنْہُ السُّوْۗءَ وَالْفَحْشَاۗءَ۰ۭ۝ اِنَّہٗ مِنْ عِبَادِنَا الْمُخْلَصِيْنَ﴿24﴾
اور بیشک عورت نے اس کا ارادہ کیا اور وہ بھی عورت کا ارادہ کرتا اگر اپنے رب کی دلیل نہ دیکھ لیتا ہم نے یوں ہی کیا کہ اس سے برائی اور بے حیائی کو پھیر دیںبیشک وہ ہمارے چُنے ہوئے بندوں میں سے ہے
وَاسْتَبَقَا الْبَابَ وَقَدَّتْ قَمِيْصَہٗ مِنْ دُبُرٍ وَّاَلْفَيَا سَيِّدَہَا لَدَا الْبَابِ۰ۭ۝ قَالَتْ مَا جَزَاۗءُ مَنْ اَرَادَ بِاَہْلِكَ سُوْۗءًا اِلَّآ اَنْ يُّسْجَنَ اَوْ عَذَابٌ اَلِيْمٌ﴿25﴾
اور دونوں دروازے کی طرف دوڑےاور عورت نے اس کا کُر تا پیچھے سے چیر لیا اور دونوں کو عورت کا میاں دروازے کے پاس مِلا بولی کیا سزا ہے اس کی جس نے تیری گھر والی سے بدی چاہی مگر یہ کہ قید کیا جائے یا دکھ کی مار
قَالَ ہِىَ رَاوَدَتْنِيْ عَنْ نَّفْسِيْ وَشَہِدَ شَاہِدٌ مِّنْ اَہْلِہَا۰ۚ۝ اِنْ كَانَ قَمِيْصُہٗ قُدَّ مِنْ قُبُلٍ فَصَدَقَتْ وَہُوَمِنَ الْكٰذِبِيْنَ﴿26﴾
کہا اس نے مجھ کو لبھایا کہ میں اپنی حفاظت نہ کروں اور عورت کے گھر والوں میں سے ایک گواہ نے گواہی دی اگر ان کا کُر تا آ گے سے چرا ہے تو عورت سچی ہے اور انہوں نے غلط کہا
وَاِنْ كَانَ قَمِيْصُہٗ قُدَّ مِنْ دُبُرٍ فَكَذَبَتْ وَہُوَمِنَ الصّٰدِقِيْنَ﴿27﴾
اور اگر ان کا کُر تا پیچھے سے چاک ہوا تو عورت جھوٹی ہے اور یہ سچے
فَلَمَّا رَاٰ قَمِيْصَہٗ قُدَّ مِنْ دُبُرٍ قَالَ اِنَّہٗ مِنْ كَيْدِكُنَّ۰ۭ۝ اِنَّ كَيْدَكُنَّ عَظِيْمٌ﴿28﴾
پھر جب عزیز نے اس کا کُر تا پیچھے سے چرا دیکھا بولا بیشک یہ تم عورتوں کا چرترہے بیشک تمہارا چرتربڑا ہے
يُوْسُفُ اَعْرِضْ عَنْ ھٰذَا۰۫۝ وَاسْتَغْفِرِيْ لِذَنْۢبِكِ۰ۚۖ۝ اِنَّكِ كُنْتِ مِنَ الْخٰطِــِٕيْنَ﴿29﴾
اے یوسف تم اس کا خیال نہ کرو اور اے عورت تو اپنے گناہ کی معافی مانگ بیشک تو خطاواروں میں ہے
وَقَالَ نِسْوَۃٌ فِي الْمَدِيْنَۃِ امْرَاَتُ الْعَزِيْزِ تُرَاوِدُ فَتٰىہَا عَنْ نَّفْسِہٖ۰ۚ۝ قَدْ شَغَفَہَا حُبًّا۰ۭ۝ اِنَّا لَنَرٰىہَا فِيْ ضَلٰلٍ مُّبِيْنٍ﴿30﴾
اور شہر میں کچھ عورتیں بولیں کہ عزیز کی بی بی اپنے نوجوان کا دل لبھاتی ہے بیشک ان کی محبّت اس کے دل میں پَیر گئی ہے ہم تو اسے صریح خود رفتہ پاتے ہیں
Join Our Online Tajveed Course Classes
Flag Counter
Top